پنجاب بھر کے تعلیمی بورڈز انٹرمیڈیٹ پارٹ ٹو کے نتائج کا اعلان 20 اکتوبر کو کریں گے

لاہور (سپیشل رپورٹر) صوبے کے 9 تعلیمی بورڈ انٹرمیڈیٹ پارٹ ٹو کے نتائج کا اعلان 20 اکتوبر کو کریں گے۔ امیدوار اپنے نتائج متعلقہ ویب سائٹ اورمتعلقہ بورڈ کی جانب سے دیئے گئے نمبر پر ایس ایم ایس کر کے بھی معلوم کر سکیں گے۔ تعلیمی بورڈز کے چیئرمین نتائج کا اعلان صبح دس بجے کریں گے۔ پوزیشن ہولڈرز کا اعلان نہیں کیا جائے گا۔ نتائج گریڈ کی بنیاد پر ترتیب دیئے گئے ہیں۔

انٹرمیڈیٹ پارٹ ٹو کے نتائج کی تاریخ کا اعلان کردیا گیا

لاہور بورڈ انٹرمیڈیٹ پارٹ ٹو کے نتائج کا اعلان 20 اکتوبر کو کرے گا۔ امیدواراپنا رولنمبر ایٹ ڈبل زیرو ٹو نائن پر ایس ایم ایس کرکے بھی نتائج معلوم کرسکیں گے۔

تفصیلات کےمطابق لاہور بورڈ انٹرمیڈیٹ پارٹ ٹو کے نتائج کا اعلان 20 اکتوبر کو کرے گا۔ رواں سال انٹرپارٹ ٹو کے امتحان میں ایک لاکھ پچھتر ہزار سے زائد امیدواروں نے شرکت کی۔ نتائج کا اعلان چیئرمین لاہور بورڈ صبح دس بجے کریں گے۔ اس بار بھی بورڈ کی جانب سے پوزیشن ہولڈرز کا اعلان نہیں کیا جائے گا۔

نتائج لاہور بورڈ کی ویب سائٹ سے آن لائن معلوم ہو سکے گا۔ امیدواراپنا رولنمبر ایٹ ڈبل زیرو ٹو نائن پر ایس ایم ایس کرکے بھی نتائج معلوم کرسکیں گے۔

صوبائی وزیر تعلیم مراد راس ڈینگی بخار میں مبتلا

لاہور میں ڈینگی وباء پھیلنے لگا، صوبائی وزیر تعلیم مراد راس ڈینگی بخار میں مبتلا ہوگئے۔

لاہور میں ڈینگی وباء پھیلنے لگی، صوبائی وزیر تعلیم مراد راس ڈینگی بخار میں مبتلا ہوگئے،بخار کیوجہ سے مراد راس کے پلیٹ لیس کم ہونے لگے۔ڈاکٹروں نے مراد راس کو آرام کی ہدایت کردی۔ مراد راس کا کہنا ہے کہ شہر میں ڈینگی مچھر موجود ہے شہری اور طلباء احتیاط کریں۔

ڈگریوں کی وصولی کے لئے طالبات پر نئی شرط لگ گئی

ہوم اکنامکس یونیورسٹی نے 47 ویں کانووکیشن میں شرکت اور ڈگری وصولی کیلئے رجسٹریشن فیس مقرر کر دی،بی ایس کی ڈگری کیلئے رجسٹریشن فیس 3 ہزار، ایم فل 4 ہزار اور پی ایچ ڈی کی فیس 5 ہزار مقرر کی گئی ہے۔

وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر کنول امین کی زیر صدارت اجلاس میں کانووکیشن کمیٹیاں تشکیل دے دی گئیں، کانووکیشن میں گریجویٹ طالبات کی رجسٹریشن کیلئے 10 اکتوبر آخری تاریخ مقرر کی گئی ہے۔ کانووکیشن میں بی ایس ڈگری کیلئے رجسٹریشن فیس 3 ہزار، ایم فل 4 ہزار اور پی ایچ ڈی کی فیس 5 ہزار مقرر کی گئی۔ ہوم اکنامکس یونیورسٹی کی گریجویٹ طالبات ویب سائٹ پر رجسٹریشن کرا سکتی ہیں ۔شعبہ امتحانات کے مطابق کانووکیشن میں ڈگری کیلئے گریجویٹ طالبات کو لازمی رجسٹریشن کرانا ہوگی۔

وائس چانسلر جی سی یو لاہور کے خلاف پنجاب اسمبلی میں قرارداد جمع

گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور میں جلسہ کروانے پر وائس چانسلر کے خلاف پنجاب اسمبلی میں قرارداد جمع کروا دی گئی ہے۔ مذکورہ قرارداد پاکستان مسلم لیگ ن کی رکن اسمبلی عنیزہ فاطمہ کی جانب سے جمع کروائی گئی۔

قرارداد میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم نوجوان نسل کو انتشار اور بدامنی کا لیکچر دینا دہشتگردی کے مترادف ہے۔ طلبا کو تعمیر کی بجائے تخریب کی طرف مائل کرنا انتہائی گھناؤنا اور ناقابل معافی جرم ہے۔

قرارداد کے متن میں مزید کہا گیا کہ تعلیمی اداروں میں منفی تقریبات کرنا یا اس کی اجازت دینا کسی بھی کسی بھی تعلیمی ادارے کے سربراہ کی تخریبی سوچ کا نتیجہ ہے اور ملک کے نامور تعلیمی ادارے گورنمنٹ کالج یونیورسٹی کو سیاسی اکھاڑہ بنانا افسوس ناک ہے۔

قرارداد میں مزید کہا گیا کہ بچے ہمارا مستقل اور قومی سرمایہ ہیں انہیں سیاست میں دھکیلنے کی کوئی گنجائش نہیں۔ پنجاب اسمبلی کا یہ ایوان گورنمنٹ کالج یونیورسٹی کے وائس چانسلر کے اس اقدام کی مذمت کرتا ہے اور محکمہ ہائر ایجوکیشن اس ادارے کی انتظامیہ کے خلاف سخت ایکشن لیکر دوسروں کے لیے مثال قائم کرے۔

فنڈز کی کمی،محکمہ ہائر ایجوکیشن کا اہم منصوبہ التوا کا شکار

فنڈز کی کمی،محکمہ ہائر ایجوکیشن کا تعلیمی بورڈز کو سولر پر منتقل کرنے کا منصوبہ التوا میں،لاہور بورڈ کو 96 لاکھ بجلی کا بل ادا کرنے میں بھی مشکل درپیش ہے۔

محکمہ ہائر ایجوکیشن کا تعلیمی بورڈز کو سولر پر منتقل کرنے کا منصوبہ التوا کا شکار ہے۔ایک سال قبل تعلیمی بورڈز کو سولر پر منتقل کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔مہنگی بجلی استعمال کرنے سے تعلیمی بورڈز کو مالی مشکلات کا سامنا ہے۔

صرف لاہور بورڈ کو گذشتہ ماہ بجلی کے بل کی مد میں 96 لاکھ کا بل آیا ۔ہائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ بھی اپنے فیصلہ پر عملدرآمد کروانے میں ناکام ہے۔محکمہ ہائر ایجوکیشن کے مطابق تعلیمی بورڈز کے پاس فنڈز کی کمی ہے۔بورڈز کو دوبارہ فیصلے پر عملدرآمد کی ہدایات کریں گے۔

اساتذہ میں خوشی کی لہر ؛ اہم مراسلہ جاری

سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کے تحت کام کرنے والے ایم فل اور پی ایچ ڈی اساتذہ کی آسامیاں اپ گریڈ کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا،فیصلہ سے اعلی تعلیم یافتہ اساتذہ میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ۔

محکمہ سکول ایجوکیشن نے ایم فل اور پی ایچ اساتذہ کی آسامیاں اپ گریڈ کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ ایم فل اور پی ایچ ڈی کی ڈگری رکھنے والے اساتذہ کو خصوصی رعائیت دی جائے گی۔ سی ایم سیکرٹریٹ کی جانب سے خصوصی رعائیت کے لئےمحکمہ سکول ایجوکیشن کو مراسلہ جاری کر دیا گیا ہے۔

مراسلے میں اساتذہ کے اسامیاں اپ گریڈ کرنے کے لئے کیلئے محکمہ سکول ایجوکیشن سے تجویز مانگی گئی ہے۔ محکمہ سکول ایجوکیشن دس روز میں سی ایم آفس کو جواب بھجوائے گا۔

پنجاب کے پرائمری سکولوں کے اساتذہ کیلئے اہم خبر

لاہور سمیت پنجاب بھر کے 32 ہزار پرائمری سکولوں میں معیار تعلیم کی بہتری کیلئے اساتذہ کی آن لائن حاضری ،تربیت،آن لائن امتحانات ، مانیٹرنگ اور نتائج کیلئے ٹیبلٹس اور ایک لاکھ پچپن ہزار پرائمری اساتذہ کو ڈیٹا سم فراہم کیجائیں گی۔

تفصیلات کےمطابق پنجاب بھر کےپرائمری سکولوںکا معیار تعلیم بہترکرنیکا فیصلہ کیا گیا ہے۔لاہورسمیت پنجاب بھر کے32ہزار سکولوں کامعیارتعلیم بہتر بنایا جائیگا۔ پرائمری سکولوں میں اساتذہ کی تربیت کیلئے 32 ہزار ٹیبلٹس دیئے جائینگے۔ سکولوں میں پڑھانیوالے 1لاکھ55ہزار اساتذہ کو ڈیٹا سم فراہم کیجائیں گی۔ پرائمری سکولوں میں بچوں کی حاضری اور ٹیسٹ ٹیب پر لیا جائے گا۔

ٹیبلٹ کے ذریعے اساتذہ کی کارکردگی ،نتائج کی بھی مانیٹرنگ ہوگی۔خراب نتائج دینے والے پرائمری اساتذہ کیخلاف کارروائی کیجائے گی۔ اساتذہ کے خلاف کارروائی پیڈا ایکٹ کے تحت کیجائے گی۔

خبردار! پنجاب یونیورسٹی کے طلباء کے ساتھ ہاتھ ہوگیا

پنجاب یونیورسٹی سوشل ورک ڈیپارٹمنٹ میں طلبہ سے ہاتھ ہوگیا،ملازمین طلباء کو جعلی ووچر دے کر فیسوں میں بیس سے پچیس لاکھ کا مبینہ فراڈ کرکے غائب ہوگئے،ڈیپارٹمنٹ نے بدعنوانی کی انکوائری کیلئے کمیٹی تشکیل دے دی۔

پنجاب یونیورسٹی کے شعبہ سوشل ورک میں ملازمین نے طلباء کی فیسوں میں ہیراپھری کرتے ہوئے بیس سے پچیس لاکھ کا مبینہ فراڈ کر ڈالا۔ مبینہ غبن تیسرے اور چوتھے سمسٹر کے طلبہ کی فیسوں میں کیا گیا۔ ایڈمن آفیسر اکرم اور سینئر کلرک یاسر نے بینک کے جعلی واؤچر دے کر فیسوں میں مبینہ غبن کیا۔ دونوں ملازمین نے طلباء سے کیش فیسیں وصول کیں۔

چیئرپرسن سوشل ورک ڈیپارٹمنٹ ڈاکٹرمہنازحسن نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے انکوائری کیلئے ڈیپارٹمنٹل کمیٹی بنا دی ہے۔ ڈاکٹرمہنازحسن کے مطابق کلرک سینئر یاسر چار ہفتوں سے غائب ہے، رجسٹرار آفس معاملے کو دیکھ رہا ہے۔

لاہور کے سرکاری اسکولوں کی سنی گئی

لاہور کے 7 خستہ حال سکولوں کی سنی گئی، خستہ حال سکولوں کی تعمیرو مرمت کیلئے فنڈز جاری ،،ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی نے 50 کروڑ روپے جاری کردیئے۔

ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی لاہور کے مطابق گورنمنٹ کمپری ہینسیو گرلز ہائی سکول وحدت روڈ کو 5 کروڑ، گورنمنٹ گرلز ہائی سکول نزولی بازار کو 4 کروڑ 70 لاکھ روپے جاری کئے گئے ہیں، گورنمنٹ ہائی سکول برکی کو بھی 14 کروڑ روپے، گورنمنٹ پرائمری سکول نورپور کو 5 کروڑ روپے سے زائد کی رقم جاری کیے گئے ہیں۔

اسی طرح سی ڈی جی پرائمری سکول تحصیل شالیمار مادھولال حسین کو 14 کروڑ روپے، گورنمنٹ ہائی سکول شاہ کمال اچھرہ کو ایک کروڑ روپے اور گورنمنٹ سکول لکھوکی کو 4 کروڑ تیس لاکھ روپے کی رقم جاری کی گئی ہے۔ ڈی ای او سکینڈری ملک احسان کا کہنا ہےکہ مذکورہ رقم سکولوں کے اکاونٹ میں منتقل کردی گئی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ فنڈز صرف سکولوں کی تعمیر نوء پر ہی خرچ کیے جاسکیں گے۔